<
Breaking News Pakistan - بریکنگ نیوز پاکستان
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

بیرونی قرضوں کاحجم جی ڈی پی کے 91.2فیصدتک پہنچ گیا

اسلام آباد(وقا ئع نگارخصوصی)پاکستان تحریک انصاف کے دور حکومت میں قرضوں میں تیزی سے اضافے کے باعث ملک پربیرونی قرضوں کا حجم جی ڈی پی کے 91.2فیصد تک پہنچ گیاہے جبکہ پاکستانی قوانین کے مطابق بیرونی قرضے جی ڈی پی کے 60فیصد سے زیادہ نہیں ہونے چاہئیں۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان کے مئی میں جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق رواں مالی سال کے پہلے 9 ماہ میں قرضوں کے بوجھ میں ریکارڈ5 ہزار 215 ارب روپے اضافہ ہوا جس کے بعد ملک پر قرضوں کا مجموعی بوجھ ریکارڈ 35ہزار 94ارب روپے ہوگیا ۔ اعدادوشمار میں مزید بتایاگیا ہے کہ جولائی تا مارچ ملکی قرضے 1754 ارب روپے بڑھ گئے جبکہ اسی مدت میں غیر ملکی قرضے 2 ہزار 525 ارب روپے بڑھ گئے ۔اسی طرح جولائی تا مارچ سرکاری اداروں کے قرضے 310 ارب روپے بڑھ گئے ۔ سٹیٹ بینک کی رپورٹ میں بتایاگیا ہے کہ ملکی قرضے بڑھ کر18 ہزار 170 ارب روپے ہو گئے جبکہ غیر ملکی قرضے ریکارڈ 13 ہزار 477 ارب روپے ہو گئے ۔ سرکاری اداروں کے قرضے 1 ہزار 378 ارب روپے جبکہ آئی ایم ایف کے قرضوں کی مالیت 811 ارب 20 کروڑ روپے ہے ۔واضح رہے کہ 30 جون 2018 تک ملک پر مجموعی قرضوں کا بوجھ 29 ہزار 879 ارب روپے تھا۔مسلم لیگ (ن) کے 5 سالہ دورحکومت میں قرضوں میں 15 ہزار 600 ارب جبکہ پیپلز پارٹی کے دور میں قرضوں کا بوجھ 8 ہزار 200 ارب روپے بڑھا تھا ، اسی طرح پرویز مشرف کے 9 سالہ دور میں قرضوں میں 3 ہزار 200 ارب روپے اضافہ ہواتھا

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More