<
Breaking News Pakistan - بریکنگ نیوز پاکستان
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

سابقہ وزرا، ارکان اسمبلی، بیوروکریٹس پنجاب ہائوس کے 5 کروڑ کے نادہندہ

لاہور(انور حسین سمرائ) مسلم لیگ (ن) کے ارکان قومی و صو بائی اسمبلی ، سیاسی لیڈراناور گزشتہ پانچ سالہ دور حکومت میں پنجاب اور وفاق میں حکمرانوں کے ساتھ تعینات رہنے والے اکثر بیورکریٹس پنجاب ہائوس اسلام آباد کے 5کروڑ 80لاکھ کے نادہندہ نکلے ۔ ایوان وزیر اعلیٰ نے پنجاب ہائوس اسلام آباد انتظامیہ کو نادہندہ سیاست دانوں اور بیورکریٹس سے مطلوبہ رقم برآمد کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔ انتظامیہ نے تمام نادہندہ بیورکریٹس اور سیاست دانوں کو ریکوری نوٹس بھی جاری کردیئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق پنجاب کی تبدیلی سرکار نے پنجاب ہائوس اسلام آباد کا شہباز شریف کے 5 سالہ دور حکومت میں ہونے والے استعمال کا سپیشل آڈٹ کرایا جس میں انکشاف ہوا کہ مسلم لیگ (ن) دور کے وفاقی و صوبائی وزرائ، ارکان پارلیمنٹ اور صوبے و وفاق مین تعینات بیوروکریٹس نے پنجاب ہائوس اسلام آباد میں رہائشی سہولیات حاصل کیں لیکن اکثریت نے کرایہ ادا نہ کیا جس کی وجہ سے ان سیاسی افراد اور افسران کی طرف بقایاجات کی مد میں 5کروڑ 80لاکھ کی ریکوری بنتی ہے جو یہ ادا نہ کرسکے اور حکومت اپنی مدت پوری کرکے ختم ہوگئی۔ ذرائع نے بتایا اتنی بڑی رقم کی ادائیگی نہ ہونے کی وجہ سے پنجاب ہائوس اسلام آباد کو مالی و انتطامی امور میں مشکلات کا سامنا ہے ۔ ذرائع کے مطابق پنجاب ہائوس اسلام آباد کی ریزرویشن ایوان وزیر اعلیٰ سے کی جاتی تھی اور گزشتہ پانچ سالوں میں سرکاری اخراجات میں سادگی مہم کے باوجود پنجاب ہائوس اسلام آباد کا بے دریغ استعمال کیا گیا اور کرایہ بھی ادا نہ کیا گیا جبکہ کھانے وپینے کے اخراجات بھی ادا نہ کئے گئے ۔ پانامہ لیکس میں نااہل ہونے کے بعد نواز شریف نے کئی سیاسی میٹنگز بھی پنجاب ہائوس میں کیں جن کی ادائیگی بھی نہ ہوسکی۔ ذرائع نے مزید بتایا کچھ سابق وزراء اور بیورکریٹس نے پنجاب ہائوس میں مستقل سکونت بھی رکھی اور غیر قانونی طور پر قابض بھی رہے اور ایک روپیہ کرایہ ادا نہ کیا۔ ایوان وزیر اعلیٰ کے ایک سینئر اہلکار نے بتایا پنجاب ہائوس میں 50سے زائد کمرے ہیں جو افسران اور سیاست دانوں کے استعمال میں رہتے ہیں لیکن معمولی کرایہ ہونے کے باوجود بھی یہ لوگ کرایہ ادا نہیں کرتے ۔سرکاری دستاویزات کے مطابق پنجاب حکومت نے مارچ میں وزیر اعظم کی ہدایت پر ملک بھر میں قائم 4پنجاب ہائوسزکے کمروں کا ارکان اسمبلی اور افسران کی طرف سے بے جا استعمال اور غیر قانونی قبضے کو روکنے کے لئے ان کے کرائے کے ریٹس میں 300 فی صد اضافہ کردیا تھا۔ نئے کرایے کے مطابق پنجاب ہائوس اسلام آباد، راولپنڈی، مری اور کراچی میں ارکان اسمبلی اور افسران کے لئے سنگل روم کا یومیہ کرایہ 500سے بڑھا کر 2ہزار کردیا گیا ہے اور 6 ماہ تک فی ماہ کرایہ 20ہزار مختص کردیا گیا ہے اور اس عرصے کے بعد فی یوم دو ہزار کرایہ اضافی لیا جائے گا۔ عام شہریوں کیلئے سنگل روم کا کرایہ دو ہزار فی یوم سے بڑھا کر 3500 فی یوم ، چھ ماہ کے لئے 30 ہزار اور چھ ماہ بعد فی یوم 3500 روپے اضافی کرایہ مختص کیا گیا ہے ۔ ان ریسٹ ہائوسز میں ڈبل روم کا کرایہ ارکان پارلیمنٹ اور سرکاری افسرا ن کے لئے 800 روپے فی یوم سے بڑھا کر 4ہزار کردیا گیا ہے جبکہ چھ ماہ کے لئے رہائش رکھنے پر 25ہزار کرایہ فی ماہ مقرر کیا گیا ہے جبکہ چھ ماہ بعد 3ہزار فی یوم کرایہ چارج کیا جائے گا۔عام شہریوں کے لئے ڈبل روم کا موجودہ کرایے کو 3500 سے بڑھا کر 5ہزار کیا گیا ہے جبکہ چھ ماہ کے لئے 35ہزار فی ماہ کرایہ مختص کیا گیا ہے اور چھ ماہ کے بعد فی یوم کرایہ 3500 اضافی لیا جائے گا

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More