<
Breaking News Pakistan - بریکنگ نیوز پاکستان
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

راولپنڈی کنٹونمنٹ بلڈنگ انسپکٹرز کا گٹھ جوڑ ، برٹس ہوم کا مکان کمرشل مارکیٹ میں تبدیل

انچارج زائد داد خان تسلیم کرتے ہیں کہ عمارت غیر قانونی ہے اسی لئے مجتبیٰ کو معطل کرنے کی بجائے تبدیل کرنے کا دعویٰ کر دیا

https://fb.watch/rQCr2Sl0Mh/

Watch complete video  fallow  link

خیر خواہوں نے گھوڑے دوڑا دیئے اس عمارت کے علاوہ 14 اور غیر قانونی عمارتوں کی نشاندہی ذرائع نے کرادی ہے

انچارج بلڈنگ سیکشن کے واضع موقف کے بعد اگر کوئی بھی ذمہ دار شواہد کے ساتھ چاہیے تو اپنا موقف دے سکتا ہے ، ادارہ

راولپنڈی ( بریکنگ نیوز پاکستان ) راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ کے علاقے برٹش ہوم میں گھریلو مکان کو کمرشل مارکیٹ میں تبدیل کر دیا گیا ہے جبکہ اس وارڈ میں تعینات بلڈنگ انسپکٹر مجتبیٰ کو معطل کرنے کی بجائے دوسرے وارڈ میں تبدیل کر دیا گیا ہے ۔ اس ضمن میں انچارج بلڈنگ سیکشن زاہد داد خان کا کہنا ہے کہ ان کے علم میں ہے کہ یہ کمرشل عمارت غیر قانون طور پر تعمیر ہو چکی ہے اسی لیے انہوں نے مجتبیٰ کو اس وارڈ سے ہٹا دیا ہے ایک ذمہ دار کی جانب سے دیے جانے والے اس غیر ذمہ دارانہ بیان نے کنٹونمنٹ بورڈ کے افسران کی کارکردگی پر سوالیہ نشان بنا دیا ہے لاکھوں روپے ٹیکس اور جرمانے کا نقصان پہنچانے کا سبب بننے والے اور رہائشی عمارت کو کمرشل میں تبدیل کرنے والے بلڈنگ انسپیکٹر کے خلاف انکوائری ، معطلی یا کوئی بھی محکمانہ کاروائی کی بجائے اس کو دوسرے وارڈ میں تبدیل کرکے مبینہ تحفظ فراہم کیا گیا ہے ۔ یاد رہے کہ رواں ہفتے راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ کا عملہ گوالمنڈی کے مقام پر زیر تعمیر عمارت کو مسمار کرنے کی کوشش میں مالکان کی جانب سے مزاحمت پر ان سے الجھ پڑا اور دونوں جانب سے شامی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں ہاتھا پائی کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں اور ذرائع کا دعویٰ ہے کہ گوالمنڈی کی متنازعہ عمارت کے مالک کی جانب سے بھی یہی الزام لگایا گیا ہے کہ راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ کا ملازم ان سے اس عمارت کے عوض مبینہ نظرانہ وصول کر چکا ہے۔اب اگر برٹش ہوم میں گھر کے نقشے پر تعمیر کی گئی مذکورہ کمرشل عمارت کو مسمار کیا جاتا ہے تو وہاں پر بھی اہلیان علاقہ سمیت عمارت کے مالکان کی جانب سے اسی قسم کا رد عمل دیکھنے میں اسکتا ہے کیونکہ باخبر ذرائع کا دعوی ہے سابقہ بلڈنگ انسپکٹر مجتبیٰ نے یہاں سے مبینہ چار لاکھ کا نظرانہ وصول کیا ہے اور اب اس عمارت کو گرایا جانا مشکل ہی نہیں ناممکن ہو چکا ہے راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ میں بلڈنگ سیکشن میں شفافیت کے خواہاں چیف ایگزیکٹو سمیت دیگر افسران کو اپنے فرائض کی ادائیگیوں میں کوتاہیوں کا مظاہرہ کرنے والے بلڈنگ انسپیکٹر کو دوسرے وارڈوں میں تبدیل کرنے کی بجائے ان کو بلا امتیاز قرار واقعی محکمانہ سزائیں دینا ہونگی بصورت دیگر لاکھوں روپے اندر کرنے کے بعد معطلیوں اور تبادلوں کا کھیل یونہی چلتا رہے گا اور یوں واریاں لگانے والے بلڈنگ انسپیکٹر بار بار معطلی یا تبادلے کے کچھ عرصے بعد بلڈنگ سیکشن میں ہی تعینات ہوتے رہیں گے اس ضمن میں بلڈنگ سیکشن کے انچارج زاہد داد خان کا وضع موقف سامنے اچکا ہے لیکن اگر کوئی اور بھی مذکورہ عمارت کی قانونی حیثیت یا کسی بھی حوالے سے اپنا موقف دینا چاہے گا تو اپنی غیر جانبدارانہ پالیسی کے مطابق ادارے کی جانب سے مناسب جگہ فراہم کی جائے گی۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More